”تمہارا آئیڈیل کون ہے اور کس ملک کی طرف سے کھیلنا چاہتے ہو؟“ لندن کے 13 سالہ بچے سے ریڈیو پر جب یہ سوال پوچھا گیا تو اس نے ایسا جواب دیدیا کہ ”گوروں“ کے منہ کھلے کے کھلے رہ گئے، پاکستانیوں کے سینے فخر سے پھول گئے

لاہور : کرکٹ کا کھیل کھلاڑیوں کو نوجوان نسل کا آئیڈیل بننے کا موقع فراہم کرتا ہے تاکہ ان کی نقش قدم پر چلتے ہوئے مستقبل میں وہ بھی اپنے ملک کا نام روشن کر سکیں۔

پاکستانی فاسٹ باﺅلرز ہمیشہ سے ہی پوری دنیا میں پسند کئے جاتے رہے ہیں۔ وسیم اکرم ہوں یا وقار یونس، شعیب اختر ہوں یا محمد عامر، ان سب نے اپنی اپنی طوفانی باﺅلنگ کی بدولت انہوں نے پوری دنیا میں دھاک بٹھائی اور پاکستان کا نام روشن کیا جبکہ کوئی بھی دوسرا ملک پاکستانی باﺅلرز جیسا باﺅلر پیدا نہیں کر سکا۔

دنیا کے تیز ترین انسان یوسین بولٹ نے بھی ایک مرتبہ انکشاف کیا تھا کہ نوجوانی میں وہ جب کرکٹ کا کھیل شوق سے دیکھتے تھے تو وقار یونس کے بہت بڑے مداح تھے۔

لندن کے ایک ریڈیو پروگرام میں 13 سالہ لڑکے سے پوچھا گیا کہ وہ کس کھلاڑی سے متاثر ہے اور کس ملک کی نمائندگی کرنا چاہتا ہے تو اس کے جواب نے ”گوروں“ کو حیران کر دیا۔ 13 سالہ لڑکے نے کہا کہ وہ فاسٹ باﺅلر حسن علی سے بہت متاثر ہے لیکن جب اس نے یہ کہا کہ وہ پاکستان کیلئے کرکٹ کھیلنا چاہے گا تو سننے والوں کی حیرت کی انتہاءنہ رہی۔ 13 سالہ لڑکے کا کہنا تھا کہ وہ کرکٹ کیلئے پاکستانیوں کے جنون کو دیکھتے ہوئے پاکستان کی نمائندگی کرنا چاہے گا۔

Comments

comments

Leave a Comment