حفیظ کرکٹ سے کب ریٹائرہوں گے!انٹرویو میں بتا دیا سینئیر کھلاڑیوں پر بھاری ذمہ داری کا بھی بتا دیا

پاکستان اور نیوزی لینڈ کے درمیان تین ٹی ٹؤنٹی میچز کی سیریز کا کل سے آغاز ہو گا.جس سے پہلے آج یو اے ای میں ایک انٹرویو کے دوران اپنے مُستقبل کے پلانز اور پانے اوپر ایک سینیر کے طور پر بھاری ذمہ داریوں کا بھی بتا دیا.

مُحمد حفیظ کا انٹرویو کے دوران کہنا تھا کہ ہر سینیر کھلاڑی جو کہ ٹیم میں ہے اُس پر یہ ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ نوجوان کھلاڑیوں کے ساتھ اپنا تجربہ شئیر کرے جو کہ اُنکو انٹرنیشنل لیول پر بہترین کھلاڑی بننے میں مدد کرے.

انکا مزید کہنا تھا کہ میں ہر اُس نوجوان کھلاڑی سے اپنا تجربہ شئیر کرتا ہوں اور اُسکو اُسکی خامیاں اور کمزوریاں بتاتا ہوں جو کہ سیکھنے کی لگن میں رہتا ہے.

حفیظ کا مزید کہنا تھا کہ فٹنس کسی بھی ٹیم اور کسی بھی کھلاڑی کی سب سے پہلی ترجیح ہونی چاہیے اور میں اپنی ٹیم انتظامیہ کو داد دیتا ہوں جنہوں نے فٹنس کو بہترین رکھنے کا معیار اپنایا.

مُحمد حفیظ سے صحافی نے سوال کیا کہ آپ انٹرنیشنل کرکٹ سے ریٹائرمنٹ کب لے رہے ہیں.تو انہوں نے جواب دیا کہ وہ دن جب میں یہ محسوس کروں گا کہ میری فٹنس اب وہ نہیں ہے جو کہ انٹرنیشنل کرکٹ کھیلنے کے لئے ضروری ہے تو میں کسی کے کہے بغیر ہی ریٹائرمنٹ لے لوں گا.اور اُسکے بعد کسی قسم کی انٹرنیشنل کرکٹ نہیں کھیلوں گا.

یاد رہے کہ مُحمد حفیظ کو ایشیا کپ 2018 میں مکی آرتھر کے کہنے پر ڈراپ کر دیا گیا تھا کیونکہ اُنکا پلان یہ ہے کہ سینیر کھلاڑیوں کو مزید نہ کھلایا جائے اور نوجوان کرکٹرز کو لے کر چلا جائے لیکن پھر ایشیا کپ 2018 میں بدترین پرفارمنس کے بعد آسٹریلیا کے خلاف ٹیسٹ سیریز میں مُحمد حفیظ کو فوراََ واپس بُلا لیا گیا تھا.

Comments

comments

Leave a Comment