سرفراز احمد کا آئرلینڈ کے خلاف ٹیسٹ میچ کے حصول کیے لئے انوکھا تجربہ کرنے کا فیصلہ

اسلام آباد : قومی ٹیم کے کپتان سرفراز احمد نے کہا ہے کہ نارتھمپٹن شائر کے خلاف گیارہ کھلاڑیوں کا انتخاب اسی سوچ کیساتھ کیا گیا کہ آئر لینڈ کے خلاف پہلے ٹیسٹ میں یہی ٹیم میدان میں اتاریں گے اور اب جیت کے بعد قوی امکان ہے کہ ٹیسٹ کے لئے ہمارے گیارہ کھلاڑی تقریبا یہی ہوں گے۔تفصیلات کے مطابق وکٹ کیپر سرفراز احمد کی قیادت میں پاکستان ٹیم آئر لینڈ کے خلاف واحد ٹیسٹ کھیلنے کے لئے منگل کی شام ڈبلن پہنچ گئی۔

ایک انٹرویو میں سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ نارتھمپٹن میں میزبان ٹیم کے خلاف چار روزہ میچ جیت کر بڑا حوصلہ ملا ہے ،اور وہ امید کرتے ہیں کہ اس جیت کے ساتھ دورے میں ٹیم عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کر نے کے لئے پر عزم ہے۔

اس سوال کے جواب میں کہ قومی ٹیم کے گیارہ کھلا ڑی کیا ہوسکتے ہیں سرفراز احمد کا کہنا تھا کہ نارتھمپٹن شائر کے خلاف ہم نے گیارہ کھلاڑیوں کا انتخاب اسی سوچ کیساتھ کیا تھا کہ آئر لینڈ کے خلاف پہلے ٹیسٹ میں یہی ٹیم میدان میں اتاریں گے،اور اب جیت کے بعد قوی امکان ہے کہ ہمارے ٹیسٹ کے لئے گیارہ کھلاڑی تقریبا یہی ہوں گے۔

وکٹ کیپر بیٹسمین نے کہاکہ ہم ٹیسٹ میچ میں پانچ بولرز کے ساتھ مخالف ٹیم کا مقابلہ کر نا چاہیں گیاور موجودہ الیون اسی سوچ کے ساتھ ترتیب دی گئی تھی۔محمد عامر کے سوال پر کپتان کا کہنا تھا کہ دورہ انگلینڈ میں 3اننگز میں فاسٹ بولرکی جانب سے ایک وکٹ حاصل کر نا یقینا ًتشویش کی بات ہے البتہ خوشی اس بات کی ہے کہ ٹیسٹ سے قبل وکٹ نہ ملنے کی عامر کی بھوک بڑھ گئی ہے،جس کا مطلب یہ ہو گا کہ وہ پوری توانائی کے ساتھ ہمارے لئے بولنگ کر نے کے لئے دستیاب ہوگا۔

اظہر علی کے بارے میں کپتان سرفراز احمد کا کہنا ہے کہ اظہر علی ایک ورلڈ کلاس بیٹسمین ہے جن کی ماضی میں شاندار کارکردگی ٹیم کے کام آتی رہی ہیں ،اس لیے ایک دو اننگز سے کوئی فرق نہیں پڑتا۔قومی ٹیم کے کپتان نارتھمپٹن شائر کے خلاف اسد شفیق کی سنچری اور حارث سہیل کی جانب سے دونوں اننگز میں نصف سنچری بنانے پر خاصے خوش ہیں ،اور ان کا خیال ہے کہ اس پرفارمنس کے بعد ٹیم کی بیٹنگ لائن اپ پر بہت حد تک دباؤ کم ہوا ہوگا۔

سرفراز نے اس سوال کا جواب نفی میں دیا کہ کیا نارتھمپٹن میں 10 وکٹ کی پرفارمنس کے بعد شاداب خان یاسر شاہ کا نعم البدل ثابت ہو سکتے ہیں۔سرفراز نے کہا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ شاداب کی کارکردگی قابل ستائش ہے، لیکن اسے یاسر شاہ کی جگہ لینے میں ابھی وقت لگے گا،کیوں کہ یاسر شاہ ایک تجربے کار اور ماہر بولر ہے جس کا ثبوت ٹیسٹ کر کٹ میں ان کی کاکردگی میں تواتر ہے۔

Comments

comments

Leave a Comment