قومی کرکٹ ٹیم میں پہلے سکھ کھلاڑی کی شمولیت ۔۔۔ پاکستان میں کرکٹ کے مداحوں کے لیے دھماکہ خیز بریکنگ نیوز آ گئی

لاہور (ویب ڈیسک ) پاکستان کرکٹ ٹیم کا مضبوط پوائنٹ ہمیشہ ہی بولنگ رہی ہے۔ فاسٹ بولنگ میں ایسے ایسے ہیرے ٹیم میں شامل رہے، جنہوں نے اپنی گیند بازی سے دنیا کو ورطہ حیرت میں ڈال دیا۔ اس کی مثالیں فضل محمود سے حسن علی تک بکھیری پڑی ہیں۔ایک دور عمران خان،عبدالقادر اور سرفراز نواز کا تھا،

وسرا دور وسیم اکرم، وقار یونس اور عاقب جاوید کا تھا،اس کے بعد شعیب اختر، ثقلین مشتاق، عبدالرزاق، اظہر علی بیٹسمینوں کے لئے وبال جان بنے رہے،تو وہ وقت بھی آیا جب محمد عامر، محمد آصف اور سعید اجمل نے بیٹسمینوں کو وکٹ کھو دینے کے ڈر میں مبتلا رکھا اور آج کل عمر گل، حسن علی، جنید خان،محمد عامر اور شاداب خان اپنی گیند بازی سے کرکٹ کےمیدانوں میں دھوم مچارہے ہیں۔

اب قومی امکان ہے کہ جلد ہی قومی کرکٹ کے افق پر ایک اور فاسٹ بولر بھی جگمگائے گا جس کا نام ہے ’مہیندر پال سنگھ‘، جو قومی کرکٹ میں جگہ بنانے میں کامیاب رہے تو پہلے ’پاکستانی سکھ کرکٹر ‘ہوں گے۔مہیندر پال نے نجی ٹی وی سے خصوصی گفتگو کی ،اس موقع پر ان کا انداز بیاں جوش وعزم سےبھرپور رہا۔وہ اپنی باتوں میں اب تک کی کارکردگی میں مطمئن اور ’مزید کچھ کرنا ہے‘ کی بے چینی کا حسین امتزاج لگے۔

پاکستان میں ’گریڈ ٹو ‘لیول پر کرکٹ کھیلے والے مہیندرپال سنگھ پنجاب یونیورسٹی کے شعبہ فارمیسی کے طالب علم ہیں۔وہ گرمیوں کےموسم میں بھی بھرپور پریکٹس کرتے ہیں۔ ان کا معمول ہے کہ روز صبح 6 بجے اٹھتے ہیں،ڈیڑھ تک ورزش کرتے ہیں، جس میں 40 منٹ تو صرف رننگ کو دیتے ہیں۔ پھر یونیورسٹی جاتے ہیں، ساڑھے 3 بجے سے ساڑھے 7 بجے یعنی 4 گھنٹوں تک کرکٹ کی تربیت پر توجہ دیتےہیں

Comments

comments

Leave a Comment