لیڈز ٹیسٹ کے پہلے روز کے کھیل کے اختتام پر پاکستانی بولرز کو بڑی کامیابی مل گئی

لیڈز: لیڈز ٹیسٹ کے پہلے روز انگلینڈ نے کھیل کے اختتام پر اپنی پہلی اننگز میں 2وکٹوں کے نقصان پر 106 رنز سکور کرلیے ہیں۔انگلینڈ کے لیے الیسٹر کک اور کینٹن جیننگز نے اننگز کا آغاز کیا اور پہلی وکٹ کی شراکت میں 53رنز جوڑے جس کے بعد جیننگز فہیم اشرف کا شکار بنے، الیسٹر کک اور جو روٹ نے دوسری وکٹ کے لیے51رنز کا اضافہ کیا جس کے بعد سابق کپتان46رنز بنا کر حسن علی کا شکار بن گئے ۔

اس سے قبل لیڈز کے ہیڈنگلے کرکٹ سٹیڈیم میں کھیلے جا رہے میچ میں پاکستانی کپتان سرفراز احمد نے پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا جو غلط ثابت ہوا۔۔پاکستان کی بیٹنگ لائن اپ کو ابتدا ہی سے انگلش بولروں نے پریشان رکھا۔ گرین شرٹس کے پہلے آﺅٹ ہونے والے بلے باز امام الحق تھے جو اسٹورٹ براڈ کی گیند پر سلپ میں موجود انگلش کپتان جو روٹ کو کیچ دے بیٹھے۔

امام الحق کے بعد اگلے آﺅٹ ہونے والے بیٹسمین اظہر علی تھے جو براڈ کی گیند پر ایل بی ڈبلیو ہوگئے جبکہ حارث سہیل 28 رنز بناکر کرس ووکس کی گیند کا شکار بنے۔۔پاکستان کی وکٹیں گرنے کا سلسلہ جاری رہا جب اسد شفیق 27 رنز بناکر ووکس کی گیند پر ایلسٹر کک کے ہاتھوں کیچ آﺅٹ ہوگئے۔آگے آنےوالے بیٹسمین بھی خاطر خواہ کارکردگی دکھانے میں ناکام رہے۔

کپتان سرفراز احمد 14، عثمان صلاح الدین 4 جبکہ فہیم اشرف بغیر کوئی رن بنائے پویلین لوٹ گئے۔ اس موقع پر گرین شرٹس کا سکور 7وکٹوں کے نقصان پر 79 رنز تھا۔۔پاکستان کے اختتامی بلے بازوں نے کچھ مزاحمت دکھائی اور آخری تین وکٹیں سکور میں 95 رنز بنانے میں کامیاب رہیں۔شاداب خان اور محمد عامر کے درمیان 34، شاداب اور حسن علی کے درمیان 43 جبکہ شاداب اور محمد عباس کے درمیان 18 رنز کی شراکت نے پاکستان کو شرمندگی سے بچالیا۔
شاداب خان نے 10 چوکوں کی مدد سے 56 رنز کی شاندار اننگز کھیلی۔ انگلینڈ کی جانب سے جیمز اینڈرسن 3، سٹورٹ براڈ اور کرس ووکس نے 3، 3 جبکہ ڈیبیو کررہے سیم کرن نے ایک وکٹ حاصل کی۔۔پاکستان لیڈز کے ہیڈنگلے کرکٹ سٹیڈیم میں کھیلے جا رہے میچ میں انگلینڈ کو شکست دے کر 22 سال بعد سیریز اپنے نام کرنے کا خواہاں ہے۔۔پاکستان کے کپتان سرفراز احمد کا ٹاس جیت کر کہنا تھا کہ لیڈز وکٹ بیٹنگ کے سازگار نظر آ رہی ہے اور اس کا فائدہ حاصل کرنے کی کوشش کریں گے۔

یاد رہے کہ آخری مرتبہ قومی ٹیم نے وسیم اکرم کی قیادت میں 1996 ءمیں انگلینڈ کو دو ایک سے شکست دے کر سیریز اپنے نام کی تھی۔ پاکستان اس اہم ترین میچ میں نوجوان بیٹسمین عثمان صلاح الدین کو ٹیسٹ کیپ دی جنہیں میچ کے دوران زخمی ہونے والے بابر اعظم کی جگہ شامل کیا گیا ہے۔گزشتہ 8 میں سے 6 ٹیسٹ ہارنے والی انگلش ٹیم بدترین دور سے گزر رہی ہے جسے میچ جیت کر سیریز بچانے کا مشکل ترین چیلنج درپیش ہے۔

انگلینڈ کو گزشتہ 6 ماہ میں آسٹریلیا کے ہاتھوں ایشیز میں چار صفر اور نیوزی لینڈ کےخلاف ایک صفر سے شکست ہوئی تھی۔اگر لیڈز ٹیسٹ پاکستان نے جیت لیا یا میچ ڈرا ہوگیا تو انگلش ٹیم جو روٹ کی قیادت میں مسلسل تیسری ٹیسٹ سیریز ہار جائےگی۔پاکستانی ٹیم متحدہ عرب امارات میں 13۔2012 ءمیں انگلینڈ کےخلاف کلین سویپ کر چکی ہے اور اگر آج شروع ہونےوالے لیڈز ٹیسٹ میں گرین کیپس نے میزبان ٹیم کو شکست دی تو سرفراز، مکی آرتھر اور انضمام کے کمبی نیشن میں پاکستانی شاہین ایک اور اعزاز اپنے نام کر کے بلندیوں کی جانب پرواز کریں گے۔

Comments

comments

Leave a Comment