پاکستان سپر لیگ کو نقصان پہنچانے کے لیے بھارت کے اوچھے ہتھکنڈے بے نقاب،کیا کچھ کر رہا ہے؟ خبر آگئی

دبئی: پاکستان کرکٹ بورڈ کے زیر اہتمام پاکستان سپر لیگ 2016سے یو اے ای اور کسی حد تک پاکستان کے میدانوں پر کامیابی سے جاری ہے جس کی ترقی اور مقبولیت کا گراف تواترکے ساتھ بلند ہورہا ہے، جس کے سبب اب اس کی راہ میں مشکلات بھی کھڑی کی جا رہی ہیں۔

یو اے ای میں آئی پی ایل 2019کے میچز منتقل کرنے کے علاوہ وہاں افغان کرکٹ لیگ اور ٹی ٹین لیگ پہلے ہی پی ایس ایل کےلئے چیلنج بن چکی ہیں جبکہ بھارتی بورڈ اور اسپانسرزکی مدد سے سری لنکا نے بھی اپنی پریمیئر لیگ دوبارہ شروع کرنے کا اعلان کر رکھا ہے، اسی اثنائ میں خود اس ملک سے اپنی نجی ٹی ٹوئنٹی لیگ کرانے کا منصوبہ منظر عام پر آیا ہے جہاں پی ایس ایل کھیلی جاتی ہے۔ پی ایس ایل کے حقیقی میزبان یو اے ای نے اب اپنی ٹوئنٹی 20لیگ شروع کرنے کی منصوبہ بندی کرلی ہے اور مبینہ طور پر اسے لیگ شروع کرنے پر آمادہ کرنے میں بھارتی بورڈ کا اہم کردار ہے جہاں سے

اس لیگ کو کئی بڑے اسپانسرز اور فرنچائزڈ خریدنے کے امیدوار دینے کی یقین دہانی کرائی گئی ہے۔ذرائع کے مطابق یو اے ای نے پاکستان سپر لیگ جو عموماً فروری میں کھیلی جاتی ہے اس سے ایک ماہ قبل کرانے کا منصوبہ بنایا ہے جس کے تحت یہ لیگ جس کا فی الحال حتمی نام ظاہر نہیں کیا گیا ہر سال دسمبر اور جنوری میں ہو گی ابتدائی طور پر 10سالہ لیگ پلان بنایا گیا ہے،یو اے ای ٹوئنٹی 20لیگ کے مجوزہ پلان کے مطابق ٹورنامنٹ 24روز پر مستمل ہوگا جس مٰں شامل ٹیموں کے درمیان 22میچز کھیلے جائیں گئے،میچز دبئی ،ابوظہبی ، شارجہ ،عجمان اور راس الخیمہ میں کھیلے جائیں گئے16رکن سکواڈ میں ہر ٹیم6انٹرنیشنل کھلاڑی کھلانے کی حقدار ہوگی،امارات کر کٹ حکام کے مطابق لیگ آئی سی سی سے باقاعدہ منظور شدہ ہوگی۔(ف،م)

Comments

comments

Leave a Comment