پاکستان سے مقابلہ آسٹریلوی ٹیم نے اپنا اہم کھلاڑی بھارت بھیجنے کا فیصلہ کر کے سب کو حیران کر دیا

سڈنی: آسٹریلیا نے پاکستان سے اسپن جنگ کیلیے ابھی سے کمرکس لی سیریز سے قبل سلو بولرز کو تیاری کیلیے اے ٹیم کے ساتھ بھارت بھیجا جائے گا سیریز کے باقاعدہ شیڈول کا اعلان 2 روز میں متوقع ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان اور آسٹریلیا میں دہائیوں سے جاری کرکٹ جنگ کا اگلا دور رواں برس یو اے ای میں ہوگا جہاں پر اسپنرز کا راج رہتا ہے، 2 ٹیسٹ کی مختصر سیریز کے دونوں مقابلے روایتی انداز میں دن کی روشنی میں ہی کھیلے جائیں گے، جلد ہی کینگروز سے دبئی اور ابوظبی میں کھیلی جانے والی سیریز کا شیڈول جاری کردیا جائے گا۔ گذشتہ سال سری لنکا نے پاکستان کو دبئی میں نائٹ ٹیسٹ میں 68 رنز سے شکست دی تھی۔اس مقابلے میں خاص طور پر پاکستان کے اہم ہتھیار لیگ اسپنر یاسر شاہ کو گیند پر گرپ میں مشکل کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ اب آسٹریلیا کو یاسر سے زیادہ خوف محسوس ہورہا ہے جو28 ٹیسٹ میں 29.44 کی اوسط سے 165 وکٹیں لے چکے اور میچ ونر کا درجہ رکھتے ہیں۔

دبئی میں انھوں نے 37 اور شیخ زید اسٹیڈیم میں 22 شکار کیے ہیں۔ آسٹریلیا بھی اسپن کنڈیشنز کا توڑ کرنے کیلیے اپنی پلاننگ کرچکا، ناتھن لیون امیدوں کا محور ہوں گے، وہ بھارت اور بنگلہ دیش میں اچھی کارکردگی دکھا چکے، اسی طرح ٹیم میں ایشٹون ایگر، جان ہالینڈ اور مچل سویپسن بھی موجود ہوسکتے ہیں۔ ان میں سے ٹیسٹ تجربے کے حامل ایگر اور ہالینڈ کے ساتھ ناتجربہ کار لیگ اسپنر سویپسن کو اپنا کیس مضبوط کرنے اور کنڈیشنز سے ہم آہنگ ہونے کا موقع فراہم کرنے کیلیے اے ٹیم کے ساتھ بھارت بھیجا جارہا ہے جہاں رواں ماہ سیریز طے ہے، اے سائیڈ کے کپتان مچل مارش یو اے ای میں ٹم پین کے نائب ہوسکتے ہیں۔ 2014 میں پاکستان نے آسٹریلیا کو 2-0 سے وائٹ واش کیا تھا۔

Comments

comments

Leave a Comment