کپتان کے کپتان کی گواہی: انتخاب عالم نے عمران خان کے حوالے سے ایسا انکشاف کر دیا کہ پاکستانی دنک رہ گئے

کراچی: کپتان کے کپتان کی گواہی سامنے آگئی، سابق کپتان انتخاب عالم نے عمران خان کو فائٹر قرار دے دیا. ان خیالات کا اظہار انھوں نے نجیٹی وی چینل کے پروگرام اسپورٹس روم میں‌ گفتگو کرتے ہوئے کیا. ان کا کہا کہ عمران خان ہمیشہ بڑے بڑے گول حاصل کرنے کی کوشش کرتے ہیں.

انھوں نے کہا کہ عمران خان اور میں 15 سال اکٹھے رہے ہیں، انھوں نے ہمیشہ بڑے مقاصد پر نظر رکھی. انتخاب عالم نے کہا کہ عمران خان کو کامیابی 22 سال کی محنت کے بعد ملی، عمران خان نے اپنی صلاحیت سے خود کو ثابت کیا. ان کا کہنا تھا کہ عمران خان نے 92 کے ورلڈ کپ میں بڑی ہمت کا مظاہرہ کیا تھا، ہار نہ ماننا عمران خان کی سب سے بڑی خوبی ہے. سابق ٹیسٹ کرکٹر نے ماضی یاد کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان نے 1974 کے بعد بیٹنگ پر بھی توجہ دینا شروع کی،عمران خان کی مقبولیت کا نہ رکنے والا سفر1981 سے شروع ہوا تھا. انھوں نے کہا کہ اللہ نے عمران خان کو نیک نیتی اور ان تھک محنت کی وجہ سے نوازا، کامیابی کے بعدعمران خان کا خطاب قابل تعریف ہے، اللہ نے موقع دیا ہے، امید ہے عمران خان کامیاب ہوں گے.جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق راؤف کلاسرا نے کہاکہ عمران خان کو وزیراعظم بننے سے اب کوئی نہیں روک سکتا,عمران خان کا وزیراعظم بنناپاکستان کے لئے خوش آئیند ہے، اب صرف دو نہیں ایک پاکستان ہو گا پاکستانی عوام نے تحریک انصاف پر اعتماد کر کے یہ ثابت کیا ہے کہ عوام نااہل حکمرانوں کے بوسیدہ نظام سے جان چھوڑانا چاہتی ہے، عوام نے عمران خان کے حق میں فیصلہ دے کر ملک کو بچایا ہے،انہوں نے کہا کہ عمران خان عوام کو کبھی مایوس نہیں کرے گے اور ان کی امیدوں پر پورا اترے گے( ن) لیگ والوں کا ہارنے کے بعد دھاندلی کا شور مچانا وطیرہ ہے،جب ان کے حق میں فیصلے آتے ہیں تو سب اچھا لگتا ہے یہ فیصلہ عوام نے کیا ہے جس کو عوام نے تسلیم کرتی ہے اب ایک نیا پاکستان بنے گا جس میں چور لٹیروں کے لیے کوئی جگہ نہیں ہو گی اور عوام آزادی کی زندگی بسر کرے گے۔

کراچی: کپتان کے کپتان کی گواہی سامنے آگئی، سابق کپتان انتخاب عالم نے عمران خان کو فائٹر قرار دے دیا. ان خیالات کا اظہار انھوں نے نجیٹی وی چینل کے پروگرام اسپورٹس روم میں‌ گفتگو کرتے ہوئے کیا. ان کا کہا کہ عمران خان ہمیشہ بڑے بڑے گول حاصل کرنے کی کوشش کرتے ہیں.

انھوں نے کہا کہ عمران خان اور میں 15 سال اکٹھے رہے ہیں، انھوں نے ہمیشہ بڑے مقاصد پر نظر رکھی. انتخاب عالم نے کہا کہ عمران خان کو کامیابی 22 سال کی محنت کے بعد ملی، عمران خان نے اپنی صلاحیت سے خود کو ثابت کیا. ان کا کہنا تھا کہ عمران خان نے 92 کے ورلڈ کپ میں بڑی ہمت کا مظاہرہ کیا تھا، ہار نہ ماننا عمران خان کی سب سے بڑی خوبی ہے. سابق ٹیسٹ کرکٹر نے ماضی یاد کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان نے 1974 کے بعد بیٹنگ پر بھی توجہ دینا شروع کی،عمران خان کی مقبولیت کا نہ رکنے والا سفر1981 سے شروع ہوا تھا. انھوں نے کہا کہ اللہ نے عمران خان کو نیک نیتی اور ان تھک محنت کی وجہ سے نوازا، کامیابی کے بعدعمران خان کا خطاب قابل تعریف ہے، اللہ نے موقع دیا ہے، امید ہے عمران خان کامیاب ہوں گے.جبکہ دوسری جانب ایک خبر کے مطابق راؤف کلاسرا نے کہاکہ عمران خان کو وزیراعظم بننے سے اب کوئی نہیں روک سکتا,عمران خان کا وزیراعظم بنناپاکستان کے لئے خوش آئیند ہے، اب صرف دو نہیں ایک پاکستان ہو گا پاکستانی عوام نے تحریک انصاف پر اعتماد کر کے یہ ثابت کیا ہے کہ عوام نااہل حکمرانوں کے بوسیدہ نظام سے جان چھوڑانا چاہتی ہے، عوام نے عمران خان کے حق میں فیصلہ دے کر ملک کو بچایا ہے،انہوں نے کہا کہ عمران خان عوام کو کبھی مایوس نہیں کرے گے اور ان کی امیدوں پر پورا اترے گے( ن) لیگ والوں کا ہارنے کے بعد دھاندلی کا شور مچانا وطیرہ ہے،جب ان کے حق میں فیصلے آتے ہیں تو سب اچھا لگتا ہے یہ فیصلہ عوام نے کیا ہے جس کو عوام نے تسلیم کرتی ہے اب ایک نیا پاکستان بنے گا جس میں چور لٹیروں کے لیے کوئی جگہ نہیں ہو گی اور عوام آزادی کی زندگی بسر کرے گے۔

Comments

comments

Leave a Comment